Use of ibuprofen cures or kills

Use of ibuprofen cures or kills

Use of ibuprofen cures or kills

Use of ibuprofen cures or kills
Use of ibuprofen cures or kills

بروفن کا استعمال شفاء یا ہلاکت
Use of ibuprofen cures or kills
Ibuprofen
(آئبوپروفین)Drug
حکیم المیوات قاری محمد یونس شاہد میو

ہمارے ہاں عمومی طورپر کچھ دوائیں بغیر ڈاکٹر ی نسخہ کے عام فروختت ہوتی ہیں مقامی ڈسپنسر تو رہے ایک طرف پرچون کی دکانوں پر بھی کچھ ادویات دستیاب ہوتی ہیں۔ان میں ایک بروفن بھی ہے۔ اس کا بے دھڑک استعمال خطرناک نتائج پیدا کررہا ہے۔حالانکہ کوئی بھی دوا بالخصوص تالیفی ادویات یوں بغیر تشخیص اور ضرور ت کے دستیاب ہونا خطرے کی گھنٹی ہے۔استعمال کندہ یہ نہیں جانتے کہ کسی بھی دوا کے بارہ میں حدود و قیود کیا ہیں۔حالانکہ بروفن حاملہ عورتوں کے ممنوع قرار دی گئی ہے۔لیکن اسے حاملہبے دھڑک بروفن کھاتی ہیں۔(دیکھئے وکی پیڈیا)
بروفن ایک برانڈ کا نام ہے اور اس کے اندر آئبوپروفین فارمولہ ہوتا ہے
بالفاظ دیگر اس فارمولہ کو یوں لکھتے ہیں(C13H18O2)
یہ ایک غیر سٹیرایڈیل اینٹی سوزش(سوزش کو ختم کرنے والی) دوا ہے
جو عام طور پر بخار کو کم کرنے اور درد کو دور کرنے کے لیے استعمال ہوتی ہے۔
یہ کاؤنٹر پر دستیاب ہے یعنی کے آپ اسے ڈاکٹر کے نسخے کے بغیر بھی میڈیکل سٹور یا فارمیسی سے طلب کر سکتے ہیں۔
اس سے لوگوں کے لیے ڈاکٹر کے پاس جانے کی ضرورت کے بغیر درد اور بخار کی علامات سے نجات حاصل کرنا آسان ہو جاتا ہے۔
آئبوپروفین کا استعمال درد کو دور کرنے کے لیے کیا جاتا ہے
، جیسے کہ سر درد، دانت میں درد، ماہواری کے درد، اور کمر میں درد۔ یہ گٹھیا اور دیگر سوزش کی حالتوں سے وابستہ درد اور سوجن کو بھی کم کر سکتا ہے۔
آئبوپروفین ایک موثر جراثیم کش دوا ہے، یعنی یہ سوزش کو کم کر کے اور پروسٹاگلینڈنز کی پیداوار کو روکتی ہے جو بخار پیدا کرنے کے ذمہ دار ہیں اور اس طرح سے یہ بخار کو کم کر سکتی ہے۔
آئبوپروفین کے زیادہ مضرر اثرات نہیں ہیں لیکن اسکے اکثر استعمال کرتے رہنے اور بہت زیادہ استعمال سے مضر اثرات پیدا ہو سکتے ہیں اور جسم میں پیچیدگیاں پیدا ہو سکتی ہیں جن کی وضاحت ہم درج ذیل بیان کریں گے ۔

آئبوپروفین کے زیادہ استعمال کے ساتھ ایک اہم تشویش معدے سے خون بہنے کا خطرہ ہے۔ آئبوپروفین کا زیادہ استعمال معدے کی اندرونی ساخت کو کافی نقصان پُہنچا سکتا ہے ، NSAIDs جیسے ibuprofen معدہ کی پرت کو خارش کر سکتے ہیں اور السر اور خون بہنے کا خطرہ بڑھا سکتے ہیں،
آئبوپروفین کے طویل مدتی استعمال سے گردے کے نقصان کا خطرہ بھی بڑھ سکتا ہے،
کیونکہ ادویات گردوں میں خون کے بہاؤ کو کم کر سکتی ہیں اور فضلہ کو فلٹر کرنے کی ان کی صلاحیت کو خراب کر سکتی ہیں۔
ان خطرات کے علاوہ،ان خطرات کے علاوہ آئبوپروفین کا ضرورت سے زیادہ استعمال ایسی حالت کا باعث بن سکتا ہے جسے MOH کہا جاتا ہے۔ MOH سر درد کی ایک قسم ہے جو اس وقت ہوتی ہے جب کوئی شخص درد کی دوائیں بہت زیادہ یا زیادہ مقدار میں استعمال کرتا ہے۔
وقت گزرنے کے ساتھ، دماغ دوائیوں پر منحصر ہو جاتا ہے اور اس دوا کی لت لگا جاتی ہےاور جیسے ہی دوا کا اثرختم ہوتا ہے سر درد واپس آ جاتا ہے۔ یہ دواؤں کے استعمال کا ایک چکر بنا سکتا ہے جسے توڑنا مشکل ہو سکتا ہے۔
ضرورت سے زیادہ آئبوپروفین کے استعمال کا ایک اور ممکنہ خطرہ دل کی بیماری کی نشوونما ہے۔
حالیہ تحقیق بتاتی ہے کہ NSAIDs جیسے آئبوپروفین کا طویل مدتی استعمال دل کے دورے اور فالج کا خطرہ بڑھا سکتا ہے۔
خطرہ ان لوگوں کے لیے سب سے زیادہ ظاہر ہوتا ہے جن کے پاس پہلے سے ہی دل کی بیماری کی تاریخ ہے یا قلبی امراض کے لیے دیگر خطرے والے عوامل ہیں جیسے ہائی بلڈ پریشر یا ہائی کولیسٹرول۔ اس بات کا خیال رکھنا چاہئے کے اگر آپ بلڈ پریشر کے مریض ہیں یہ پھر آپکا کولیسٹرول لیول زیادہ ہے تو آپ آئبوپروفین کا استعمال نہ کریں یا پھر بہت کم استعمال کریں ۔
اگر شخص کو گدے کی بیماری یا جگر کی بیماری یا دل کی بیماری یا قرحۂ ہضمی (peptic ulcer) یا بلند فشار خون ہے تو آئبوپروفین کا استعمال منع ہے۔
خوراک
آئبوپروفین کا شکلیں مختلف ہیں۔ گولی اور سفوف اور جل بالغ کے لیے ہیں اور بارہ سالوں تک کے بچوں کے لیے صرف شربت ہے۔ آئبوپروفین کی روز کی خوراک کی مقدار پچاس کلوگرام سے زیادہ وزنی فرد کے لیے 1200 ملی گرام سے 2400 ملی گرام تک ہے۔ سب سے بڑی آئبوپروفین کی خوراک 30 کلوگرام کے بچوں کے لیے 500 ملی گرام ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *