Use of chicken claws, relief from joint pains

Use of chicken claws, relief from joint pains

Use of chicken claws, relief from joint pains

Use of chicken claws, relief from joint pains
Use of chicken claws, relief from joint pains

مرغی کے پنجوں کا استعمال،جوڑ دردوں سے نجات
Use of chicken claws, relief from joint pains
استخدام مخالب الدجاج لتخفيف آلام المفاصل

 

حکیم قاری محمد یونس شاہد میو

 

ایک وقت تھا جب مرغی کی پنجوں کا کوئی خاص مصرف نہ تھا۔اسنہیں بےکار حصہ سمجھ کر پھینک دیا جاتا تھا لیکن آج ان پنجوں کو بازار میں بڑی ان و شوکت کے ساتھ فروخت ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔ڈھیروں پنجے یومیہ بنیاد پر فروخت کے لئے دستیاب ہوتے ہیں ۔سردیوںمیں ان کا استعمال زیادہ ہونے کی وجہ سے قلت پیدا ہوجاتی ہے۔
عصر حاضر میں جوڑ دردیں ایک وبائی صورت میں دیکھنے کو ملتی ہیں،میڈیکل میں جتنی ادویات دردوں کی استعمال کی جاتی ہیں شاید ہی کوئی دوسری دوائیں استعمال ہوتی ہوں۔ہر کوئی اپنے پلوں میں درد روک ادویات باندھے پھرتا ہے۔جب بھی درد ہوا گولی نگل لی۔اس کے اثرات و عواقب کیا ہونگے کسی کے وہم میں بھی نہ ہونگے۔بعد از استعمال کے بھیانک نتائج سے نبرد آزماہوتے ہوتے زندگی بیت جاتی ہے۔
جوڑوں میں اکڑا پیدا ہونا۔کھچائو نتائو ایسی علامات ہیں چالیس سے اوپر کے لوگ بالخصوص چائے کافی تمباکو نوش ،چٹ پٹے کھانوں کے عادی لوگ اس کے عمومی طورپر شکار ہوجتے ہیں۔


ہمارا آج کا موضوع ہے بازار میں عام دستیاب مرغی کے پنچوں سے غذائی و ادویات فوائد کا حصول ہے۔قدرت نے کوئی چیز بےکار و لایعنی پیدا نہیں ،اس سے فائدہ اٹھانے کی تکنیک ہمیں خود معلوم کرنی ہوتی ہے۔جولوگ تحقیق سے کام لیتے ہیں ان کے سامنے کچھ حقائق سے پردہ سرک جاتا ہے،وہ حقائق کی کچھ روشنی کی جھلک ہم تک پہنچا دیتے ہیں۔
جوڑدوں کا درد،کیا ہوتا ہے۔اس کی تکلیف کس قدر ہوتی ہے؟یہ اس سے بہتر کون بتا سکتا ہے جو اس کرب سے گزرا ہو۔اگر مرغی کے پنجوں کا استعمال کرایاجائے تو مریض کے لئے بہتری کی ماید کی جاسکتی ہے۔یہ کوئی تخیلاتی بات نہیں حقیقت ہے کہ مرغی کے پنجوں کا سوپ۔جسم کے لئے طاقت کا گھونٹ ثابت ہوتا ہے۔جس رات مرغی کے پنجوں کا استعمال کیا جائے اس رات چین کی نیند آتی ہے۔
یہ بہت طویل موضوع اور تحقیقات کام ہے۔اس پر بہت سارا کام ہونا باقی ہے۔

چکن کا استعمال فوائد سے بھرپور

چکن روزمرہ کی بہت سی خوراکوں میں اہم جزو ہوتا ہے، اور چکن ٹانگوں کو کھاتے وقت کھانا پکانے سے پہلے جلد اور چکنائی کو دور کرنے اور تلنے سے گریز کرنا افضل ہے جس میں بڑی مقدار میں تیل ڈالنے کی ضرورت ہوتی ہے۔
اس کے بجائے چکن کی ٹانگوں کو تھوڑا سا تھائم، پیش کرنے سے پہلے پسی ہوئی کالی مرچ، تھوڑا سا زیتون کا تیل اور چکن سٹاک فرنچ فرائز، گاجر کے ساتھ کھائیں، آپ کو یہ بہت اچھا لگے گا۔
چکن کی ٹانگیں وٹامن سے بھرپور ہوتی ہیں

:

وٹامن بی کی کمی دور کرنا

یہ جسم کو وٹامن بی 12 کی بڑی مقدار فراہم کرتا ہے جو کہ اعصابی خلیوں کی صحت کے لیے بہت ضروری ہے۔
وٹامن بی 12 بنیادی طور پر ہائپر ایکٹیویٹی کو کنٹرول کرنے کے ساتھ ساتھ پینٹوتھینک ایسڈ فراہم کرنے کا ذمہ دار ہے۔۔۔۔وٹامن ڈی بچوں کی صحت کے لیے بہت ضروری ہے۔
جوڑوں کے لیے چکن ٹانگوں کے فوائد:
اس میں کولیجن پروٹین کی بڑی مقدار ہوتی ہے جو ہڈیوں کی نشوونما اور مضبوطی کے لیے بہت فائدہ مند ہے، جو کہ چکن ٹانگوں کو کمزور جوڑوں کے لیے ایک مثالی حل بناتا ہے، اور ہڈیوں اور مسلز سے متعلق صحت کے تمام مسائل سے بھی بچاتا ہے، جن میں سب سے اوپر گٹھیا ہے۔

یہ مختلف سوزشی کیفیات سے چھٹکارا پانے میں کافی حد تک مدد کرتا ہے، جن میں سب سے اوپر گٹھیا ہے، خاص طور پر اس کے دائمی اور شدید کیسز، اور اس بیماری کے ساتھ ہونے والے درد اور اینٹھن کی شدت کو بھی کم کرتا ہے، اس حقیقت کی بدولت اس میں چار مادے ہوتے ہیں۔ پروٹین کی بنیادی اقسام جو جسم کی ساخت کو مضبوط بنانے کے لیے اہم ہیں۔

چکن کی ٹانگیں پروٹین اور چربی سے بھرپور ہوتی ہیں:

چکن ٹانگوں میں بہت سی کیلوریز ہوتی ہیں لیکن اعتدال میں۔

– جلد کو ہٹاتے وقت، چکن کی ٹانگ 106 کیلوریز فراہم کرتی ہے، جبکہ چکن کی ران بغیر جلد کے 176 کیلوریز پر مشتمل ہوتی ہے۔
– انسانی جلد کے بافتوں کی مرمت اور پٹھوں کی نشوونما کے لیے ضروری پروٹین اور غذائی اجزاء پر مشتمل ہے۔
چکن ٹانگوں میں موجود چکنائی انسانوں کو توانائی فراہم کرتی ہے، طرز زندگی کو سہارا دیتی ہے اور وٹامنز کو جذب کرنے میں مدد دیتی ہے۔
چکن کی ٹانگوں میں کولیجن کی مقدار زیادہ ہوتی ہے، اور چکن ٹانگوں میں پائے جانے والے کولیجن کے فوائد:
* انسانی جسم میں دباؤ کی باقاعدگی کو متحرک کرتا ہے اور اسے بڑھانے اور منظم کرنے کا کام کرتا ہے۔
* یہ جسم میں آئرن کی فیصد اور اس کے قد کو مستحکم کرتا ہے، جو کہ خون کی کمی کا سب سے طاقتور علاج ہے، خاص طور پر بچوں میں۔
چکن کی ٹانگیں معدنیات سے بھرپور ہوتی ہیں:

– سیلینیم، فاسفورس اور سیلینیم کی بڑی مقدار فراہم کرتا ہے۔
یہ ایک انزائم کو چالو کرنے میں کردار ادا کرتا ہے جو تھائیرائڈ کے افعال کو سپورٹ کرتا ہے اور خون کی نالیوں کو نقصان سے بچاتا ہے۔
ایک مرغی کے پاؤں میں 18.5 مائیکرو گرام سیلینیم، 158 ملی گرام فاسفورس، یا 34 فیصد، اور انسانی جسم کے لیے تجویز کردہ سیلینیم اور روزانہ فاسفورس کی 23 فیصد مقدار ہوتی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.