البلح۔تازہ کچی، زرد ،کھجور

البلح۔تازہ کچی، زرد ،کھجور

البلح۔تازہ کچی، زرد ،کھجور

 البلح۔تازہ کچی، زرد ،کھجور
البلح۔تازہ کچی، زرد ،کھجور

 

البلح۔تازہ کچی زرد کھجور

عضلاتی اعصابی یعنی نمو کے دوسرے مرحلہ میں داخل ہونے والی کھجور،
تحریر
حکیم قاری محم یونس شاہد میو
منتظم اعلی سعد طبیہ کالج برائے فروغ طب نبویﷺ
کاہنہ نو لاہور پاکستان

کھجورکے درخت کے معاشی فوائد

کھجور اور ان کی مصنوعات: کھجور کے درخت عرب ممالک بالخصوص عراق، سعودی عرب، مصر، تیونس، امارات اور سلطنت عمان میں سب سے زیادہ پائے جانے والے پھل دار درخت ہیں۔ کھجور کا درخت صحراؤں کے لوگوں کو سایہ اور سکون فراہم کرتا ہے، جب کہ اس کے تنے دروازے اور باڑ بنانے کے لیے استعمال ہوتے ہیں، اس کے پتے ایندھن کے لیے استعمال ہوتے ہیں، اور اس کی اختر چٹائیاں اور ٹوکریاں بنانے کے لیے استعمال ہوتی ہیں جو پکے ہوئے پھلوں کو پیک کرنے کے لیے استعمال ہوتی ہیں۔ جہاں تک کھجور کے پھلوں کا تعلق ہے، یہ توانائی کا ایک اچھا ذریعہ ہیں، اور اگر اسے صحیح طریقے سے پروسیس کیا جائے تو انہیں طویل عرصے تک محفوظ رکھا جاسکتا ہے۔ اکثر ان پھلوں کا بڑا حصہ درختوں پر پکنے کے لیے چھوڑ دیا جاتا ہے یہاں تک کہ وہ کھجور کے مرحلے پر پہنچ جاتے ہیں، پھر انہیں براہ راست اختر کے برتنوں میں پیک کر دیا جاتا ہے۔ بعض اوقات کھجور کو ذخیرہ کرنے سے پہلے سورج کی تپش میں خشک کر دیا جاتا ہے، حالانکہ یہ یہ عمل انہیں کیڑے مکوڑوں سے متاثر کرتا ہے” “خوراک اور غذائیت” (ص 131)

ام المؤمنین عائشہ رضی اللہ عنہا کہتی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کچی کھجور اور خشک کھجور کو ملا کر کھاؤ، اور پرانی کو نئی کے ساتھ ملا کر کھاؤ، اس لیے کہ شیطان کو غصہ آتا ہے اور کہتا ہے: آدم کا بیٹا زندہ ہے یہاں تک کہ اس نے پرانی اور نئی دونوں چیزیں کھا لیں۔ ابن ماجہ، (تحفة الأشراف: 17334، ومصباح الزجاجة: 1148) كلوا البلح بالتمر فإن ابن آدم إذا أكله غضب الشيطان … لحديث.س في الوليمة (الكبرى 68) البلح الأخضر: ينفع الفم واللثة والمعدة، رديء للصدر والرئة، يولد الرياح والقراقر في البطن لا سيما مع شرب الماء، وتُدفع مضرته بأكله مع التمر أو بالعسل أو بالزبد.موسوعة الفقه الإسلامي (4/ 292)

غزوہ خیبر کا موسم بلح کا تھا

«وَكَانَ أَبُو رُهْمٍ الْغِفَارِيّ يُحَدّثُ قَالَ: أَصَابَنَا جُوعٌ شَدِيدٌ، وَنَزَلْنَا خَيْبَرَ زَمَانَ ‌الْبَلَحِ، وَهِيَ أَرْضٌ وَخِيمَةٌ حَارّةٌ شَدِيدٌ حُرّهَا»غازي الواقدي» (2/ 660):«الطبقات الكبرى ط دار صادر» (1/ 409)
“ابو رحمۃ الغفاری کہتے تھے: ہمیں سخت بھوک لگی تھی، اور ہم خیبر چلے گئے، کھجوریں کچی تھیںیہ سخت سردی کا زمانہ تھا۔”
صاحب العین لکھتے ہیں:بلح اس وقت تک کھجور کےلئے بولا جاتا ہے جب تک درخت پر اس کا رنگ سبز رہے۔جیسے شروع میں انگور کا دانہ ہوتا ہے۔
«بلح: ‌البَلَحُ: الخَلالُ، وهو حَمْلُ النَّخْل ما دامَ أخضَرَ صِغاراً كحِصْرِم العِنَب(العين» (3/ 239)
سیلان کو روکنا
«‌البلح مَتى شرب بخل خمر عفص قطع سيلان الرطوبات المزمنة»«الحاوي في الطب» (3/ 149):
بواسیر کے لئے
«البلح إِذا شرب بخل خمر عفص منع سيلان الدَّم من البواسير»«الحاوي في الطب» (3/ 440):
«‌البلح مَتى شرب بخل خمر عفص قطع الإسهال والرطوبات المزمنة السيلان من الرَّحِم وَالدَّم السَّائِل من والبواسير.
وَمَتى ضمد بِهِ الخراجات قطع الدَّم»«الحاوي في الطب» (6/ 424)
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اجزائے ترکیبی

اس میں پانی، جلاب اور جلاب ریشے زیادہ ہوتے ہیں۔ اس کے زیادہ تر اجزاء 57 فیصد کاربوہائیڈریٹس اور سادہ شکر پر مشتمل ہوتے ہیں اور جسم کو توانائی فراہم کرنے کے لیے ضروری ہے، اس لیے اسے عام طور پر کھلاڑیوں کی خوراک میں شامل کیا جاتا ہے۔ اس میں وٹامنز اور معدنیات کی ایک وسیع رینج موجود ہے، جن میں سب سے مشہور ہیں: آئرن، کیلشیم، میگنیشیم، پوٹاشیم، فاسفورس، وٹامن اے، اور وٹامن بی۔ تین چھوٹے کھجوروںمیں 60 کیلوریز ہوتی ہیں، اور اسے پھلوں کی خدمت کے طور پر شمار کیا جاتا ہے۔ اس میں پوٹاشیم کی اچھی مقدار پائی جاتی ہے جو کہ ہائی بلڈ پریشر کی روک تھام کے لیے اہم ہے۔
اس میں بہت سے اجزاء اور غذائیت کی قدروں کی وجہ سے ہیں، جیسے: وٹامن اے۔ تھامین؛ فولک ایسڈ. پوٹاشیم؛ کیلشیم۔ تانبا، لوہا، مینگنیج3. گیلاگیلا،
جو کہ ٹھوس پیلے رنگ کا پھل ہے، اس میں درج ذیل شامل ہیں: اس میں صرف 27 فیصد کاربوہائیڈریٹ ہوتے ہیں۔
کھجور کے مقابلے میں اس میں سیالوں کی مقدار زیادہ اور شکر اور فائبر کی مقدار کم ہوتی ہے۔عام طور پر، کھجور کی بہت سی قسمیں ہوتی ہیں جو ان میں شوگر کے مواد اور خون میں شوگر بڑھانے کی سطح میں مختلف ہوتی ہیں، لیکن ان میں سے زیادہ تر گلوکوز، سوکروز اور فرکٹوز پر مشتمل ہوتی ہیں۔

زرد کھجور کے فوائد

کھجور کے درخت کا پھل کھجور بننے سے پہلے کئی مراحل سے گزرتا ہے، اور یہ پانچ مراحل ہیں جو نام نہاد پولن سے شروع ہوتے ہیں، جو ایک رس میں بدل جاتا ہے، اور پھر کھجور بنتا ہے، پھر گزرتا ہے، اور پھر کھجور بن جاتا ہے، یہاں تک کہ پکتا ہے اور معمول کی تاریخ بن جاتا ہے۔کہ کھجور میں اینٹی آکسیڈنٹس ہوتے ہیں جو امائلائیڈ کے جمع ہونے کو روکتے ہیں، جو دماغ کے خلیات پر جمع ہوتے ہیں اور الزائمر اور یادداشت کی کمی کا باعث بنتے ہیں، ایک معالج غذائیت کے مشیر کا کہنا ہے۔

قبض و ہاضمہ کے مسائل

مَاء ‌البلح إِذا وضع على الْمعدة منع الذرب»«الحاوي في الطب» (2/ 363):
ہاضمہ صحت کو فروغ دیناچونکہ کھجور میں غذائی ریشہ اور کچھ معدنیات جیسے پوٹاشیم ہوتے ہیں، اس لیے یہ نظام انہضام کی صحت کو فروغ دینے، اسے ہاضمے کی خرابی اور قبض سے بچانے، آنتوں کے کام کو آسان بنانے اور جسمانی رطوبتوں کو متوازن رکھنے میں بہت اہم ہے۔ زرد کھجورمیں غذائی ریشے ہوتے ہیں جو آنتوں کو نرم کرتے ہیں۔
تھائیرائیڈ ہارمونز کی پیداوار میں مدد کرتے ہوئے، زرد کھجور آئوڈین کا ایک اچھا ذریعہ ہیں، اور یہ آپ کو مجموعی طور پر تندرستی اور راحت کا احساس دلاتی ہے۔

خون کی کمی کا علاج ۔

خون کی کمی سے بچاؤ میں کھجور کے فوائدکھجور آئرن کا ایک اچھا ذریعہ ہے جو کہ جسم میں ہیموگلوبن اور خون کے سرخ خلیات کے کام کرنے اور خون کی کمی کو روکنے کے لیے بہت ضروری ہے۔کھجوریں فولک ایسڈ کا بھی بہت زیادہ ذریعہ ہیں، بی گروپ کا پانی میں گھلنشیل وٹامن جو خون کے سرخ خلیات بنانے اور ڈی این اے بنانے کے عمل میں اہم ہے۔زرد کھجور میں آئرن کی بڑی مقدار ہوتی ہے جو اس معاملے میں بہت مفید ثابت ہوتی ہے کیونکہ یہ خون میں ہیموگلوبن بنانے میں مدد دیتی ہے۔

جسم کو توانائی سےبھرنے کے لیے کام کریں

۔ زرد کھجور انسانی جسم کے لیے اہم غذائی ذرائع فراہم کرتی ہیں، جیسے: زنک، پوٹاشیم، سوڈیم، آئرن اور مینگنیج، کیونکہ یہ معدنی نمکیات سے بھرپور غذاؤں میں سے ایک ہے جو انسانی جسم کی صحت کے لیے اہم ہے۔کھجور قدرتی شکر سے بھرپور ایک ایسا عنصر ہے جیسے: گلوکوز، فرکٹوز اور سوکروز، اور یہ اسے تیزی سے توانائی کی اعلی سطح حاصل کرنے کا ذریعہ بناتا ہے، اور ورزش یا انتہائی کوشش کی صورت میں، “کھجور” کے کچھ دانے کھانے سے وہ رمضان کی میزوں پر روزہ افطار کرنے والا بھی ہے، جہاں مسلمان جلدی توانائی حاصل کرنے کے لیے پانی کے ساتھ کھجور کھا کر روزہ ختم کرنے کو ترجیح دیتے ہیں تاکہ زیادہ کھانے سے بچنے کے لیے ترپتی کا احساس ہو۔ جیسے ہی کھجور میں موجود غذائی اجزا جذب ہو جاتے ہیں جسم کو پرامن ہونے کا احساس ہوتا ہے۔

دل کو تندرست رکھنا

کھجور میں وٹامن اے بھی ہوتا ہے جو کہ یادداشت کو مضبوط بنانے کے ساتھ ساتھ جلد کی پانی کی کمی کو روکنے میں بھی اہم کردار ادا کرتا ہے خاص طور پر زیادہ درجہ حرارت کے ساتھ۔کھجور کے 5 پھل آپ کو فری ریڈیکلز کے جمع ہونے سے بچاتے ہیں۔ روزانہ 5 کھجوریں کھانے کی پابندی “فری ریڈیکلز” کے جمع ہونے سے روکنے کا کام کرتی ہے، جو دل کی شریانوں کی دیواروں پر جمع ہو جاتے ہیں، جو فالج اور ہارٹ اٹیک کا باعث بنتے ہیں
دل کی صحت کو فروغ دیناکھجور پوٹاشیم کا ایک بھرپور ذریعہ ہے، یہ ایک معدنیات ہے جو دل کے پٹھوں کے کام کرنے کے لیے اہم ہے، اور تحقیق نے ثابت کیا ہے کہ فالج اور امراض قلب کی روک تھام میں اس کا بڑا کردار ہے۔پوٹاشیم بلڈ پریشر کو منظم اور کنٹرول کرنے میں مدد کرتا ہے، اور جسم میں سیال توازن برقرار رکھتا ہے، اور اس طرح دل اور خون کی شریانوں کی صحت کو برقرار رکھنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔پوٹاشیم کے علاوہ کھجور میں گھلنشیل فائبر ہوتا ہے جو خون میں کولیسٹرول کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے، اس طرح دل کی بیماری سے بچاتا ہے۔
جسم میں سیال کے توازن اور پٹھوں کے کام کو منظم کرنے میں پیلے رنگ کی کھجور کا حصہ ہے، کیونکہ اس میں پوٹاشیم کی بڑی مقدار ہوتی ہے۔
خلیات اور بافتوں کی تعمیر کے عمل کو فروغ دیں، کیونکہ زرد کھجوروں میں وٹامن بی 6، وٹامن بی3، وٹامن اے اور وٹامن ای ہوتا ہے۔

حاملہ عورتوں کے لئے فوائد

حاملہ خواتین کے لیے کھجور کے فوائدفائبر میں کھجور کی کثرت قبض کو روکنے میں مدد دیتی ہے جو حاملہ عورت کو متاثر کر سکتی ہے۔اس میں حمل کی صحت کے لیے ضروری زیادہ تر مواد بھی ہوتا ہے، جیسے: فولک ایسڈ، جو خاص طور پر حمل کے پہلے مہینوں میں ضروری ہوتا ہے۔جسم میں سیال کے توازن کو برقرار رکھنے اور اس میں پوٹاشیم کی مقدار زیادہ ہونے کی وجہ سے جسم میں اسے برقرار رکھنے میں بھی اس کا اہم کردار ہے۔
زرد کھجور کھانے سے حاملہ عورت کی پیدائش میں آسانی ہوتی ہے، اس لیے بچے کی پیدائش سے پہلے آخری تین ماہ میں اسے کھانا افضل ہے۔

ہڈیوں کی مضبوطی کے لئے

ہڈیوں کی صحت کو فروغ دینا اور مضبوط کرناکھجور کا ایک فائدہ یہ ہے کہ اس میں کیلشیم کی اچھی مقدار ہوتی ہے جو کہ ہڈیوں اور ان کی نشوونما کے لیے سب سے اہم معدنیات ہے، کیونکہ یہ ہڈیوں کے پتلے ہونے اور ہڈیوں کے پتلے ہونے کی روک تھام میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔
تاریخوں کا نقصان کھجور کے بہت سے فوائد کے باوجود، کثرت سے استعمال کرنے کے کچھ نقصانات اور ضمنی اثرات ہیں، جو کھجور سے ملتے جلتے ہیں، بشمول: وزن میں اضافہ: کھجور میں کیلوریز زیادہ ہوتی ہیں جو کثرت سے کھانے سے وزن میں اضافہ کا باعث بنتی ہیں۔
گردے کے مریضوں کے لیے نقصان دہ: اسے لینے سے پہلے اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کرلیں کیونکہ اس میں پوٹاشیم کی وافر مقدار ہوتی ہے۔

الرجی:

کھجور کھاتے وقت کچھ لوگوں کو الرجی ہو سکتی ہے، اور اس کی علامات یہ ہیں: ددورا، اسہال، اپھارہ اور پیٹ میں درد
ٹرائگلیسرائیڈ کی سطح کو کم کرنا، کولیسٹرول کی سطح کو منظم کرنا اور آکسیڈیٹیو تناؤ سے لڑنا، جو آپ کو اچانک دل کے دورے اور دل کی بیماری سے بچاتا ہے۔
قوت مدافعت بڑھائیں اور انفیکشن سے لڑیں، کیونکہ زرد کھجور میں میگنیشیم ہوتا ہے۔

مردوں کے لئے فوائد

مردوں میں جنسی صحت کو فروغ دینا زرد کھجور کے فوائد میں سے ایک ہے، کیونکہ ان میں معدنی نمکیات، وٹامنز اور امینو ایسڈ ہوتے ہیں جو سپرم کی تعداد اور حرکت پذیری کو بڑھانے میں مدد دیتے ہیں۔
جلد کی مرمت اور اس کی لچک کو بڑھانا، جلد پر ظاہر ہونے والی جھریوں میں تاخیر، بڑھاپے کے آثار، اور جلد کے دیگر مسائل سے لڑنا، جیسے: خارش یا دھبے۔
بلڈ شوگر کی سطح کو مستحکم کریں۔
بلڈ پریشر کو منظم کرنا۔
پٹھوں کو مضبوط اور فعال کرنا، خاص طور پر باڈی بلڈنگ پریکٹیشنرز کے لیے۔
صحت مند وزن اور بڑھوتری کو فروغ دیں۔
اپنی ہڈیوں کی صحت کو برقرار رکھیں اور متعلقہ بیماریوں سے بچیں، جیسے: آسٹیوپوروسس۔
کھوپڑی میں خون کی گردش کو بہتر بنانا، جو بالوں کی نشوونما کو فروغ دے سکتا ہے اور بالوں کو گرنے سے روک سکتا ہے۔
کولوریکٹل کینسر کی ترقی کو کم کرنا، اور عام طور پر بڑی آنت کی صحت کو فروغ دینا۔
رات کے اندھے پن کو روکنے اور بینائی اور بینائی کو محفوظ رکھنے میں مدد کریں۔

زرد کھجور کھانے سے پہلے تجاویز

زرد کھجور کے بے شمار فوائد کے باوجود حمل کی صورت میں اسے استعمال کرنے سے پہلے ڈاکٹر سے مشورہ کرنا بہتر ہے۔
کھجور کو کھانے سے پہلے اچھی طرح دھو کر صاف کرنا بھی ضروری ہے تاکہ ان پر پھنس جانے والے جراثیم سے بچا جا سکے۔

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.